آیت الکرسی کی فضلیت اور فائدے

آیت الکرسی کی فصلیت

حضرت علیؓ فرماتے ہیں کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو یہ فرماتے ہوئے سنا ہےجو شخص ہر نماز کے بعد آیت الکرسی پڑھے گا اسے جنت میں جانے سے کوئی چیز نہیں روک سکتی۔ وہ مرتے ہی جنت میں چلا جائے گا۔ جب کوئی شخص رات کو سونے سے پہلے آیت الکرسی کو پڑھے گا تو وہ خود اور اس کے آس پاس کے دوسرے گھروں والے بھی شیطان اور چوری سے محفوظ رہتے ہیں۔
حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ صدقہ فطر کی حفاظت نبی کریمﷺ نے میرے سپرد کی ایک شب شخص آیا اور غلہ بھرنے لگا تو میں نے اسے پکڑ لیا اور اس سے کہا میں تجھے نبی کریمﷺ کی خدمت میں پیش کروں گا آپؐ ہی تجھے سزا دیں گے جس پراس شخص نے کہا کہ میں محتاج اور عیالدار ہوں سخت حاجتمند بھی ہوں تو میں نے اسے چھوڑ دیا۔ جب صبح ہوئی تو میں نبی کریمؐ کی خدمت میں حاضر ہوا تو آپؐ نے فرمایا ابوہریرہ تمہارے رات کے قیدی کا کیا ہوا؟ میں نے عرض کی یا رسول اللہﷺ اس نے شدید حاجت اور عیالداری کا واسطہ دیا تھا اسی لئے مجھے اس پر رحم آگیا اور میں نے اسے چھوڑ دیا۔ نبی کریمﷺ نے فرمایا اس نے جھوٹ بولا ہے وہ پھر آئے گا۔ مجھے یقین ہوگیا کہ وہ ضرور آئے گا۔ اسی لئے کہ نبی کریمﷺ نے فرمایا ہے۔ میں اس کا انتظار کرنے لگ گیا کہ اتنے میں وہ آگیا اور غلہ بھرنے لگا میں نے اسے پھر پکڑ لیا اور کہا کہ آج تو میں تجھے ضرور نبی کریمؐ کی خدمت میں حاضر پیش کروں گا تو کہنے لگا مجھے چھوڑ دو میں محتاج ہوں عیالدار ہوں اب نہیں آئوں گا مجھے رحم آگیا اور میں نے اسے چھوڑ دیا۔ اگلی صبح پھر جب نبی کریمﷺ کی خدمت میں پیش ہوا تو نبی کریمؐ نے پھر سے وہی سوال کیا کہ ابوہریرہ تمہارے رات والے قیدی کا کیا ہوا میں نے عرض کی یا رسول اللہﷺ اس کی گریہ زاری پر مجھے رحم آگیا اور میں نے اسے پھر چھوڑ دیا نبی کریمؐ نے فرمایا اس نے تم سے پھر جھوٹ بولا اور وہ پھر آئے گا۔ میں اس کے انتظار میں تھا کہ وہ آیا اور غلہ بھرنے لگا تو میں نے اسے پکڑ لیا اور کہا کہ تین مرتبہ تو کہہ چکا ہے کہ پھر نہیں آئوں گا لیکن تو پھر آگیا آج تو میں ضرور تجھے نبی کریمﷺ کی خدمت میں پیش کروں گا۔ کہنے لگا تم مجھے چھوڑ دو میں تمہیں ایسے کلمات سکھا دوں گا جن کو پڑھنے سے اللہ پاک تمہیں نفع دیں گے۔ وہ یہ ہے کہ جب سونے کا ادارہ کروتو بسر پر آیت الکرسی پڑھ لیا کرو۔ صبح تک یہ آیت تمہاری نگہبان ہوگی اور شیطان تمہارے قریب بھی نہیں آئے گا۔ میں نے یہ سن کر پھر اسے چھوڑدیا۔ اگلے دن صبح جب نبی کریمﷺ سے ملاقات ہوئی تو نبی کریمؐ نے پھر وہی سوال کیا تمہارے قیدی کا کیا ہوا میں نے عرض کیا اس نے مجھے کلمات سکھائے جن سے اللہ تعالیٰ نفع دیں گے۔ حضورﷺ نے فرمایا یہ بات اس نے سچ کہی حالانکہ وہ بڑا جھوٹا ہے۔ تمہیں معلوم ہے کہ تین راتوں سے تمہارا مخاطب کون ہے؟ میں نے عرض کی نہیں جس پر نبی کریمؐ نے فرمایا وہ شیطان تھا۔

حدیث شریف میں آتا ہے جو کوئی بھی شخص سختی اور مصیبت میں آیت الکرسی اور سورۃ بقرہ کی آخری آیات پڑھے گا اللہ تعالی اس کی فریاد رسی کریں گے۔
جب گھر سے نکلتے وقت ایک مرتبہ آیت الکرسی پڑھو گے تو ستر ہزار فرشتے کا ایک گروہ ہر طرف سے آپ کی حفاظت کرتا ہے اگر دو مرتبہ پڑھو گے تو ستر ہزار فرشتوں کے دو گروہ آپ کی حفاظت کرتے ہیں اور اگر تین مرتبہ پڑھ لو تو اللہ رب العزت فرشتوں سے فرماتے ہیں کہ تم فکر نہ کرو میں خود اس شخص کی حفاظت کروں گا۔
جب گھر میں داخل ہوتے وقت پڑھوگے تو آپ کے گھر سے محتاجی دور ہوجائے گی۔
جب وضو کے بعد پڑھو گے تو ستر درجے بلند ہوں گے۔
فرض نماز کے بعد پڑھو گے تو ایک پائوں زمین پر دوسرا جنت میں ہوگا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *